Tayyaba Shabir Poetry

کاش میں اک چڑیا ہوتی

حمد وثناءِ رب سے اٹھتی

    صبح کو خالی پیٹ نکلتی

وسعتِ آسماں میں اڑتی پھرتی

قدرتِ رب کے نظارے کرتی

رزقِ الٰہی پر شکر میں کرتی

سیر ہو کر گھر کو پلٹتی

 اجل سے مل کر فنا میں ہوتی

میزان سے مبرّا، حساب سے بری

کاش میں اک چڑیا ہوتی

طیبہ شبیر

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*