Mehwish Chaudhry Poetry

   “زندگی”

یہ زندگی کیسی دکھتی ہے

کہیں بے درد کرتی ہے

 کہیں یہ درد دیتی ہے

کہیں مرہم بھی رکھتی ہے

کہیں بے رحم لگتی ہے

کہیں ہمدرد لگتی  ہے

کہیں یہ چھین لیتی ہے

کہیں بےلوث دیتی ہے

یہ زندگی کیسی دکھتی ہے

کبھی دکھوں میں لیپٹی ہے

کبھی سکھوں میں ڈوبی ہے

کبھی یہ ساتھ چلتی ہے

کبھی یہ چھوڑ دیتی ہے

کبھی منہ موڑ لیتی ہے

کبھی کچھ توڑ دیتی ہے

کبھی کچھ جوڑ دیتی ہے

یہ زندگی کیسی دکھتی ہے

*****

  ماہ وش چوھدری

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*